• بہار شریف میں ، اے آئی ایم ایف امیدوار ارشاد احمد نے عوامی رابطہ کیا ، لوگوں نے خیرمقدم کیا

    پٹنہ22اکتوبرirshad-ahmed2020
    آل انڈیامائنارٹیزفرنٹ کے بہار شریف اسمبلی کے امیدوار ارشاد احمد نے آج اپنے عوامی تعلقات میں بہار شریف کے متعدد علاقوں کا دورہ کیا اور لوگوں سے رابطہ کیا۔ اس دوران لوگوں نے جگہ جگہ اے آئی ایم ایف کے امیدوار ارشاد احمد کا خیرمقدم کیا۔ تعلقات عامہ کے دوران ارشاد احمد نے کہا کہ لوگ نتیش اور بی جے پی حکومت سے تنگ آچکے ہیں اور اس بار بہار کے عوام ایک مکمل تبدیلی دیکھنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بہار میں پچھلے 15 سالوں میں لوٹ گھسوٹ ہوئی ہے۔ بہار ، بچوں ، بوڑھوں ، خواتین ، نوجوانوں میں کوئی بھی محفوظ نہیں ہے۔ اب پورے بہار کے لوگ تبدیلی دیکھنا چاہتے ہیں۔ اور اس کے لئے بہار شریف میں آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ کو ووٹ ملیں گے۔

  • بی جے پی کا این آر سی لانے کا نیا جملہ بہار میں نہیںچلے گا: آصف

     بھوکے پیدل مزدوروں کو بیل گاڑی بھی نہیں دی ، اب وہ ہیلی کاپٹر پر ووٹ مانگتے ہیں: اے آئی ایم ایف

    نئی دہلی22اکتوبرsm-asif-pic12020
    آل انڈیامائنارٹیزفرنٹ نے بی جے پی صدر جے پی نڈا کے اس بیان کو قرار دیا ہے جس میں انہوں نے این آر سی کے نفاذ کا اعلان کیا ہے۔ فرنٹ نے پوچھا ہے کہ بی جے پی کیسی پارٹی ہے جس کے وزیر اعظم دہلی میں رام لیلا میدان میں کہتے ہیں کہ این آر سی نہیں لایا جائے گا۔ لیکن اسی پارٹی کے صدر کا کہنا ہے کہ این آر سی نافذ ہوگا ۔ وزیر اعظم مودی کو ایک بار پھر واضح کرنا چاہئے کہ وہ ٹھیک ہیں یا اپنی پارٹی کے صدر ٹھیک ہیں۔ انہیں یہ سمجھنا چاہئے کہ ملک میں این آرسی کو پہلے ہی مسترد کر دیا گیا ہے۔

    آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ کے صدر ایس ایم آصف نے یہاں جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ این آر سی سے متعلق وزیر داخلہ امت شاہ اور وزیر اعظم کے مابین اختلافات سامنے آنے سے قبل بی جے پی این آر سی کے معاملے میں تقسیم ہوچکے ہیں۔ تب بھی وزیر اعظم پریشان ہوگئے تھے ۔ شاید اسی لئے امت شاہ مرکزی دھارے سے الگ ہوگئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ ثابت ہوگیا ہے کہ بی جے پی تضادات اور جملے باز کی پارٹی ہے۔

    بہار میں انتخابی مہم کے سرگرمیوں میں آصف نے پٹنہ سے جاری ایک بیان میں کہا کہ مزدوروں اور ریاست کے عوام کو یہ یاد رکھنا ہے کہ جب بھوکے پیاسے تارکین وطن مزدور ننگے پیروں پر اپنے گھروں کو لوٹ رہے تھے تو نہ ہی مودی سرکار اور نہ ہی نتیش حکومت سامنے آئی ، لیکن اب وہی لوگ 22۔ 22 ہیلی کاپٹروں سے بہار میں انتخابات کے لئے اترے ہیں۔ ان کے پاس کاروں کا قافلہ ہے۔ یہ لوگ بہار کے لوگوں کو دوبارہ اقتدار پر قبضہ کرنے کے لئے بھرمانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ مرکزی حکومت کے وزراءاور نتیش حکومت کی پوری کابینہ اپنے کیمپ کے طور پر پٹنہ کے ساتھ بیٹھی ہے۔ لاوارث بہار معاش اور روزگار چاہتا ہے ، لیکن این ڈی اے گینگ انہیں لالچ میں لالچ دینے کی کوشش کر رہا ہے۔

    آصف نے کہا کہ جب نتیش نے بہار میں صنعت قائم کرنے کے امکان سے انکار کیا ، تو ایل جے کے بیٹے آر جے ڈی کے صدر تیجسوی یادو انتخابات میں وعدہ کررہے ہیں کہ وہ بہار میں صنعتوں کو ترقی دیں گے۔ انہیں یا ان کے والد لالو کو وضاحت کرنی چاہئے کہ انہوں نے 15 سال کی حکمرانی میں صنعتوں کی ترقی کیوں نہیں کی۔ اور یہ بھی بتائیں کہ انہوں نے 18 ماہ تک نتیش کے ساتھ نائب وزیر اعلی کے ساتھ رہتے ہوئے ایک صنعت قائم کرنے کے خیال کے بارے میں کیوں نہیں سوچا؟ فرنٹ کے صدر ایس ایم آصف نے کہا کہ یہ تمام جماعتیں اور ان کے قائدین واقعتا نہیں چاہتے کہ ریاست میں صنعتی انقلاب آئے۔ انہیں لگتا ہے کہ اگر بہار کے عام لوگوں کی دولت بڑھ جاتی ہے تو پھر انہیں کرسی نہیں ملے گی۔ وہ چاہتے ہیں کہ بہار مہاجر مزدوروں کی فراہمی کرنے والی ریاست بنی رہے تاکہ وہ کما سکیں اور انہیں بہار لاسکیں اور ان کی رقم عوام کو خوشحال بناسکے۔ آصف نے کہا کہ اس فیصلے کی مدت میں ، بہار کے لوگ ذات پات اور مذہب کی تنگی سے اٹھ کر بہار کے وقار اور احترام کے تحفظ کے لئے ووٹ دیں گے۔ ترقی پسند جمہوری اتحاد حکومت بناتے ہی اپنے اعلان کردہ ایجنڈے پر جلد عملدرآمد شروع کردے گی۔

  • عصمت دری اور پھر عورت کا جسم جلا نے والے بہار میں انتخابی مہم چلارہے ہیں: آصف

    ترقی پسند جمہوری اتحاد پنچایت کی سطح تک روزگار کا موقع فراہم کرے گا:آصف

    نئی دہلی21اکتوبرsm-asif-pic12020
    آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ کے صدر ایس ایم آصف نے کہا کہ ہمارا ترقی پسند جمہوری اتحاد اقتدار میں آنے کی صورت میں بہار میں پنچایت کی سطح تک روزگار کے مواقع فراہم کرے گا۔ مخلوط حکومت 20 گرام پنچایتوں کی سطح پر چھوٹی اور بڑی صنعتیں لگائے گی تاکہ بہار کے خودمختار مزدوروں کو ذلت آمیز حالات میں معاش کے لئے دوسری ریاستوں میں بھٹکنا نہ پڑے۔ انہوں نے کہا کہ یہ افسوسناک صورتحال ہے کہ انتخابات کے وقت بھی مزدور معاش کے ذریعہ بہار سے نقل مکانی کرنے پر مجبور ہیں۔اس کے لئے نتیش اور مودی اس کے ذمہ دار ہیں۔

    مائنارٹیزفرنٹ کے صدر ایس ایم آصف نے فرنٹ کے اہم اجلاس کے بعد یہاں نامہ نگاروں کو بتایا کہ قدرتی اور انسانی دولت سے مالا مال بہار میں صنعت اور روزگار سب سے بڑا سوال ہیں۔ لہذا ، ہمارا اتحاد سب سے پہلے ریاست میں اس موضوع پر کام کرے گا اور ہر ایک کو کام دیا جائے گا۔

    ایک سوال کے جوب میں جناب آصف نے کہا کہ یہ شرم کی بات ہے کہ اتر پردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ بے شرمی سے بہار کی انتخابی مہم میں اترآئے ہیں جبکہ ان کے دور حکومت میں یوپی جرم اور عصمت دری کا دارالحکومت بن گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بہار کو کسی ایسے شخص کو برداشت نہیں کرنا چاہئے جو عصمت دری کے بعد ایک بے گناہ عورت کی لاش کو جلایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اس خاتون کو اس لئے جلایا گیا تھا کہ زیادتی کرنے والوں کے خلاف کوئی مضبوط ثبوت نہیں ہے۔ صرف یہی نہیں ، عصمت دری کے بعد جھلس جانے والی خاتون کے اہل خانہ کو راحت دینے والے رہنماو ¿ں نے روک کر انہیں ذلیل کرنے کی کوشش کی۔

    آصف نے کہا کہ یوگی یہ کہہ رہے ہیں کہ مودی اور نتیش کی جوڑی کیک پر لگ رہی ہے۔ میں کہتا ہوں کہ سونا اصلی ہے یا جعلی لیکن جب وہ کانوں اور ناک کو کاٹنے لگے تو پھر اسے پھینکنا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ نتیش اور مودی نے بہار کے ناک کان کاٹ دیے ہیں۔ جب ریاست کے لاکھوں بھوکے بے سہارا مزدور اپنی جانیں بچانے کے لئے ان کی ریاست آ رہے تھے تو نتیش کمار نے انہیں ریاست میں داخل نہ ہونے کا متنبہ کیا۔ نریندر مودی خاموشی سے وزیر اعظم کی رہائش گاہ پر مورکو دانے کھلاتے رہے۔ بہار میں انتخابی مہم چلانے والے مودی کو یہ بتانا چاہئے کہ وہ بہار کے مزدوروں کی تباہ کاریوں ، اموات اور تباہی کو کیوں دیکھ رہے ہیں ، پھر ان کے منہ سے تسلی کا ایک لفظ کیوں نہیں نکلا؟ آصف نے کہا کہ بہار کے عوام کو یہ سب یاد ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ ملک اور بہار خیر سگالی کی مثال ہیں ، یہ لوگ نفرت پیدا کرنا چاہتے ہیں۔ ان کی ریاستی پالیسی جسے آئین کی حمایت حاصل ہے ، آئین کی توہین کررہی ہے۔ جو بہار دیکھ رہا ہے۔ آصف نے کہا کہ تبدیلی کی ہوا نے پورے بہار میں بہہ دی ہے۔ یہ ہوا مرکز کی طاقت کو بھی اڑا دے گی۔ترقی پسند جمہوری اتحاد بہار کے خوابوں کو پورا کرے گا۔

  • بھوک ، بے روزگاری اور کرونا وبا سے آزادی کے لئے نتیش حکومت کوہٹانا ضروری: آصف

    اب کی بار بہار میں ترقی پسند جمہوری اتحاد کی سرکار: اے آئی ایم ایف

    نئی دہلی20اکتوبر sm-asif-pic12020
    آل انڈیامائنارٹیزفرنٹ کے قومی صدر ایس ایم آصف نے کہا کہ بہار کو بھوک ، بے روزگاری اور کورونا سے آزاد کرنے کے لئے این ڈی اے کی نتیش حکومت کو ہٹانا ضروری ہوگیا ہے۔ مرکز میں مودی کے راج اور بہار میں نتیش کی حکمرانی کے تحت غربت کی افلاس میں اضافہ ہوا ہے۔ بیروزگار افراد کو کرونا کی ناقابل برداشت مار برداشت کرنا پڑتی ہے۔ این ڈی اے حکمرانی کے تحت دنیا بھر میں افلاس کی فہرست میں 107 ممالک میں بھارت 94 ویں نمبر پر پہنچ گیا ہے۔

    آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ کے صدر آصف نے کہا کہ کورونا کی وبا نے صحت کے شعبے کو ایک آمدنی کا موقع بنایا ہے۔ جیسے ہی مریض اسپتال پہنچتا ہے وہ کورونا کا شکار ہوجاتا ہے اور موت کی طرف جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ترقی پسند جمہوری اتحاد پی ڈی اے پورے ملک اور بہار کی صورتحال پر نظر رکھے ہوئے ہے۔ اس نے ریاست میں ایک متبادل دینے کا فیصلہ کیا ہے کیونکہ اس کا متبادل یہ ہے کہ تیس سالوں تک ریاست پر حکمرانی کرنے والے خود غرض لوگوں کو روکنا ہے۔ آصف نے کہا کہ یہ اتحاد بہار میں بنیادی تبدیلیاں لائے گا۔ گاندھی اور لوک نائک جے پرکاش کے خواب کو سچ بنائیں گے۔

    یہاں جاری ایک بیان میں آصف نے کہا کہ کورونا وائرس کے انفیکشن کے معاملات میں نہ صرف بھارت دنیا میں دوسرے نمبر پر ہے بلکہ اس کا انتظام پریشان کن ہے۔ آج ملک میں انفیکشن کے 75 لاکھ سے زیادہ واقعات ہیں اور 113000 سے زیادہ اموات ہوچکی ہیں۔ بھارت میں اموات کی شرح پاکستان ، بنگلہ دیش اور افغانستان جیسے پڑوسی ممالک کی نسبت دوگنا اور ہمارے پڑوسی ملک سری لنکا سے آٹھ گنا ہے۔ اسی طرح گلوبل ہنگر انڈیکس 2020 میں 107 ممالک کی فہرست میں بھارت 94 ویں نمبر پر ہے اور بھوک کی شدید سنگینی کے زمرے میں ہے۔

    پڑوسی بنگلہ دیش ، میانمار اور پاکستان بھی ‘سنگین ‘ زمرے میں ہیں۔ لیکن اس سال میں بھوک انڈیکس بھارت سے اوپر ہے۔ ایک رپورٹ کے مطابق ہندوستان کی 14 فیصد آبادی غذائیت کا شکار ہے۔ اس میں بہار کا بڑا حصہ ہے۔ آصف نے کہا کہ بہار کے عوام 15 سال بہار میں بدانتظامی کے خلاف ووٹ دیں گے۔ وزیر اعظم نریندر مودی کی سرپرستی میں نتیش کمار نے آنکھیں بند کر رکھی ہیں ، عوام اس پر ووٹ ڈالیں گے ، جرم کے خلاف ووٹ دیں گے ، بھوک کے خلاف ووٹ دیں گے ، کرونا دور میں وزیر اعلی اس پٹی کو ہٹا کر اپنی سبز آنکھ دکھانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ اگر آپ اس پر ووٹ دیتے ہیں تو بہار کے معاملات بہت بڑے ہیں اور بدقسمتی ہے کہ این ڈی اے انتخابات کے دوران فرقہ واریت کو ہوا دے رہی ہے۔ عوام کو یہ سب پتہ چل گیا ہے۔

  • نتیش راج میں لالو راج سے زیادہ جرم ، اس بار حکومت بدل دی جائے گی: آصف

    نئی دہلی19اکتوبرsm-asif-pic12020
    آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ کے قومی صدر ایس ایم آصف نے کہا کہ جب لالو-رابری راج 2005 میں قائم کیا گیا تھا تو اس کے پیچھے جرائم اور خاص طور پر اغوا کے معاملات بڑے عوامل کے طور پر سامنے آئے تھے۔ جاری انتخابی مہم میں 15 سال حکمرانی کرنے کے بعد نتیش بی جے پی آج بھی لالو دور کے جرم کو نقصان پہنچا رہے ہیں اور یہ کہہ رہے ہیں کہ اس جرم کو دوبارہ واپس لانا ہوگا۔

    سوال یہ ہے کہ کیا گڈ گورننس میں اغوا کے اسکینڈل کو روک دیا گیا ہے؟ بہار پولیس کے اعدادوشمار کے مطابق 2001- 1689 اغوا ، 2002- 1948 اغواء، 2003- 1956 اغواء، 2004- 2566 اغواء، 2005- 2226 اغوائ۔ یہ لالو رابڑی راج کے اغوا کے آخری پانچ سال ہیں۔ اب دیکھیں نتیش حکومت کی 15 سالہ آنکڑے 2006- 2301 اغواء، 2007- 2092 اغواء، 2008- 2735 اغوا ، 2009- 3142 ، 2010- 3602 ، 2011- 4211 ، 2012- 2954 ، 2013- 5506 + تاوان کے لئے – 70 اغوا ، 2014- 6570 + تاوان کے لئے- 62 اغوا ، 2015- 7127 + تاوان برائے 58 اغوا برائے 2016- 7324 + تاوان- 37 اغوا ، 2017- 8972 + تاوان برائے 42 اغوا ، 2018- 10310 + تاوان برائے 46 اغوا برائے 2019- 10925 + تاوان کے لئے – 43 اغوا ، 2020 (اگست تک) – 4982 + تاوان کے لئے – 18 اغوا۔ اعداد و شمار آپ کے سامنے ہیں … اور قائدین کے بیانات بھی۔ آصف نے کہا ، ہم پی ڈی اے اتحاد میں بہار کو عوام کی حکومت کہاں دیں گے ، جس میں مجرم بہار چھوڑ دیں گے۔

  • بہار کے عوام کو بیوقوف نہ سمجھے تیجسوی ، 10 لاکھ نوکریوں کی بات ایک جملہ ہے : آصف

    پی ڈی اے مخلوط حکومت میں پپو یادو وزیر اعلی ہوں گے: آصف

    نئی دہلی18اکتوبرsm-asif-pic12020
    آل انڈیامائنارٹیزفرنٹ کے قومی صدر ایس ایم آصف نے کہا کہ جب حکومت کے کسی بھی قانون میں بیک وقت 10 لاکھ ملازمتیں فراہم کرنے کا بندوبست ہوتا ہے تو پھر آر جے ڈی کے تیجسوی یادو بہار کے لوگوں سے ایسی جھوٹی بات کو کیسے بول سکتے ہیں۔ آصف نے کہا کہ لالو کی پارٹی جس نے کئی دہائیوں تک بہار میں حکومت کی لیکن ایک بھی آئی اے ایس، آئی پی ایس کوچنگ انسٹی ٹیوٹ کھول سکی اور ان کے بیٹے 10 لاکھ نوکریاں دینے کی بات کررہے ہیں ،اس سے بڑی جملہ بازی اور کیا ہوسکتی ہے۔

    آصف نے کہا کہ یہ انتہائی افسوس کی بات ہے کہ بہار واحد ریاست ہے جس نے سب سے زیادہ آئی اے ایس ،آئی پی ایس افسر دیااور وہیں کوچنگ انسٹی ٹیوٹ نہیں ہے ۔

    آصف نے کہا کہ پی ڈی اے مخلوط حکومت بہار کے عوام سے وعدہ کرتی ہے کہ وہ جملہ بازوں کی طرح کوئی صرف اعلان نہیں کرتی بلکہ بہار کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنے کے لئے پرعزم ہے ۔ آصف نے کہا کہ بہار میں پی ڈی اے اتحاد کی جانب سے وزیر اعلی پپو یادو ہوںگے اور بہار ایک چمکتا ہوا بہار ہوگا جہاں لوگوں کا معاش ، خواتین کے لئے احترام اور جرائم سے پاک بہار کا نظام ہوگا۔

  • بہار کے لوگ بیدار ہوچکے ہیں ، خوابوں کے سوادگر کامیاب نہیں ہوں گے: آصف

    آصف نے کسا طنز ،لالو اور نتیش بہار کو کتنی بار بنائیں گے نمبر ون

    نئی دہلی17اکتوبرsm-asif-pic12020
    آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ کے قومی صدر نے کہا کہ بڑی زرعی صنعتوں کے قیام کے بغیر بہار کو ملک میں نمبر ایک ریاست بنانا ناممکن ہے۔ ہمارا ترقی پسند جمہوری اتحاد ان دونوں شعبوں میں منصوبہ بند طریقے سے کام کرے گا جس سے روزگار کے مواقع میں تیزی سے اضافہ ہوگا۔ ریاست کے عوام خوشحال ہوں گے ، تب تجارت اور کاروبار میں اضافہ ہوگا۔ اس کی مدد سے تعلیم اور صحت کے میدان میں خود ترقی ہوگی۔
    آصف نے یہاں جاری ایک بیان میں کہا کہ 30 سالوں سے وہ اس چھوٹی سی بات کو نہیں سمجھ سکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہر بار انتخابات میں یہ رہنما اور جماعتیں یہ دعویٰ کرتی ہیں کہ وہ بہار کو ایک اولین ریاست بنائیں گے۔ فرنٹ کے صدر آصف نے لالو جی اور نتیش جی سے پوچھا ہے کہ آپ کتنی بار بہار کو نمبر ون بنائیں گے؟
    انہوں نے کہا کہ نتیش حکومت عوام کو فاقہ کشی ، بے روزگاری اور اب کورونا وبا سے بچانے میں ناکام ثابت ہوئی ہے۔ حکومت نہ صرف عام لوگوں کو کورونا سے بلکہ وزیر کو بھی بچانے میں ناکام رہی ہے۔
    فرنٹ کے صدر نے کہا کہ نتیش کمار ، جو انسانوں کو صحت کی سہولیات فراہم کرنے میں ناکام رہے ہیں ، اب انتخابات کے وقت کہہ رہے ہیں کہ جانوروں کا ایک اسپتال دس پنچایتوں پر بنایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ نتیش جملے بازی چھوڑ دیں۔ اس بار ان کی کاٹھ کی ہنڈی جل جائے گی،عوام ان کا وہم توڑ دیںگے۔ آصف نے بہار کے عوام سے کہا کہ وہ اس بار ترقی پسند جمہوری اتحاد کو مضبوط کریں۔ یہ اتحاد بہار کی عزت نفس کی حفاظت کرتے ہوئے بہار کو ایک روشن ریاست کی طرف لے جائے گا۔ انہوں نے دعوی کیا کہ اس بار این ڈی اے کا پتہ بہار سے صاف ہونا یقینی ہے۔

  • بہار کے وزرائے اعلیٰ کس منہ سے صنعتوں اور بحالی کی بات کر رہے ہیں: آصف

    نئی دہلی16اکتوبرsm-asif-pic12020
    آل انڈیامائنارٹیزفرنٹ کے قومی صدر ایس ایم آصف نے کہا کہ اب جبکہ بہار میں تبدیلی کی لہر دوڑ رہی ہے تو ایسی صورتحال میں بہار کے وزیر اعلی بہار میں کاروبار اور ملازمت کی بحالی سے پریشان ہیں۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ نتیش حکومت اس بات پر متفق ہے کہ اس نے گذشتہ دہائی سے بہار میں کچھ نہیں کیا ہے۔

    آصف نے کہا کہ جب پی ڈی اے اتحاد نے بہار کی صنعتوں اور ملازمت کی بحالی کے بارے میں بات کی تھی۔ تب سے نتیش کمار اور سشیل مودی پریشان ہوگئے ہیں کہ اب بہار میں پی ڈی اے کی مخلوط حکومت بننے جارہی ہے۔ آصف نے کہا کہ انتخابی سیزن کے دوران نتیش حکومت کو بہار میں صنعت پر قبضہ اور ملازمت کی بحالی کے جھوٹے اعلانات کرنے پڑے۔ اگر مخلوط حکومت تشکیل دی جاتی ہے تو ، وہ بہار میں ہر کام پر کام کرے گی اور ہر ضلع میں صنعتیں قائم کرے گی تاکہ بہار کے لوگوں کو بہار سے باہر نہ جانا پڑے۔

  • لوک نائک کے سپاہی آگے آئےں بہار کو اب تبدیلی کی ضرورت ہے:آصف

    بہار الیکشن: مستقبل کی تاریخ ہماری ہے : اے آئی ایم ایف

    sm-asif-pic1نئی دہلی10اکتوبر2020۔
    آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ نے بہار کے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ ریاست میں تیس سالہ حکمرانی کی ناکامیوں کو مدنظر رکھتے ہوئے آئندہ اسمبلی انتخابات میں ووٹ دیں۔ کیونکہ لوک نائک جئے پرکاش نارائن اور مہاتما گاندھی کے خوابوں کو حقیقت بنانے کے نام پر اقتدار میں آنے والے قائدین نے صرف اپنے ذاتی مفادات کو برقرار رکھا ہے اور دونوں ہاتھوں سے راج کی بے پناہ دولت لوٹ لی ہے۔ ان لوگوں نے اچھی گورننس اور ترقی کا جملہ بنایا ہے۔ یہ رہنما عوام کے ساتھ اچھا کام نہیں کرسکے اور اب وہ ہر طرح کے لالچ دے کر آپ کا ووٹ لینا چاہتے ہیں۔

    آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ کے صدر ایس ایم آصف نے ذات پات اورمذہب کے نام پر گمراہ نہ ہونے کی اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ سوراج اور پورے انقلاب کو نافذ کرنے کے لئے موجودہ حکومت کو ختم کرنا ہوگا، کیونکہ اب وہ مقامی نہیں رہی ۔

    آصف نے لوک نائک جئے پرکاش نارائن ، گاندھی اور سوشلسٹ نظام کا خواب دیکھنے والوں سے اپیل ہے کہ وہ آگے آئیں ، مائنارٹیزفرنٹ اور ترقی پسند جمہوری اتحاد کی حمایت کریں۔ انہوں نے کہا کہ بہار ، جسے بے بس کردیا گیا ہے ، آپ جیسے تبدیلی لانے والی قوتوں کی اشد ضرورت ہے۔ آصف نے کہا کہ یہ وقت فرقہ پرست طاقتوں سے آزادی کا ہے۔ اس کے لئے موجودہ حکومت سے جان چھڑانا بہت ضروری ہوگیا ہے۔

    آصف نے کہا کہ ہم اور ہمارا سیاسی اتحاد ریاست کو اختیارات دینے کے لئے تیار ہےں۔

    لوک نائک کا نعرہ ”مکمل انقلاب اب آئندہ کی تاریخ ہماری ہے“کو ہمیں کامیاب بنانا ہے۔ کیونکہ مزدور بے بس ہیں۔ روزگار کے مواقع ختم ہوگئے ہیں۔ بہار سے ہجرت کو روکیں اور بہار میں ریاست کی مزدور قوت کو بہارکی ترقی میں جوڑنے کے لئے ایک قابل حکومت کا قیام وقت کی ضرورت ہے

  • نتیش کے خط سے حکومت بے نقاب ، مستعفی ہوں نتیش: آصف

    نتیش نے بہار کی ترقی اور عزت کے تحفظ کے لئے کچھ نہیں کیا: آصف
    کچھ نہیں کیا سب کچھ پھر سے کرنا ہے تو استعفیٰ دیں نتیش : آصف

    sm-asif-pic1نئی دہلی08اکتوبر2020۔
    آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ نے کہا کہ وزیر اعلی نتیش کمار کا عوام کو کھلا خط ان کا اعتراف ہے کہ وہ اپنے پندرہ سال کے اقتدار کے دوران بہار کی ترقی اور اس کے اعزاز کے تحفظ کے لئے کچھ نہیں کر سکے ہیں۔ لہذا ، وہ اخلاقی بنیادوں پر اپنے عہدے سے استعفی دے کر اس انتخاب سے دستبردار ہوجائےں۔
    آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ کے صدر ایس ایم آصف نے ملک کے دارالحکومت سے جاری ایک بیان میں کہا کہ جب ملک کے مختلف شہروں میں لاک ڈاو ¿ن کے دوران ریاست کے کارکنوں کو جلدی کا سامنا کرنا پڑا تو ریاست کی محنت کشوں کو اپنی جانوں کی حفاظت کے لئے اپنے آبائی گاو ¿ں – قصبے میں جانا پڑا۔ واپسی کے دوران ، نتیش کمار نے کہا کہ ہم انہیں بہار میں داخل نہیں ہونے دیں گے اور پھر بھی جب وہ آئے تو انہوں نے ان کے لئے معاش کا کوئی بندوبست نہیں کیا۔ حیرت کی بات ہے کہ اس انتخابات کے دوران بھی بہار سے ملک کے مختلف شہروں میں مزدوروں کی نقل مکانی کا سلسلہ بدستور جاری ہے۔ اس کے لئے نتیش ذمہ دار ہیں۔بظاہر انہوں نے ایسا کچھ نہیں کیا جس سے مزدور خود کو اپنی ریاست میں محفوظ سمجھ سکیں۔

    آصف نے کہا ہے کہ وزیر اعلی نتیش کمار بہاریوں کے اعزاز کے تحفظ میں مکمل طور پر ناکام ہوچکے ہیں۔ چنانچہ اب انتخابات کے موقع پر وہ یہ کہہ رہے ہیں کہ نوجوانوں کو طاقت ، قابل اور خود سہارا دینے والی خواتین بنانے ، ہر فارم کو پانی مہیا کرنے ، صاف اور خوشحال دیہات اور شہر بنانے کے لئے کام کیا جائے گا۔
    آصف نے الزام لگایا کہ وہ بہار کے بھوکے عوام کو وزیر اعظم ریلیف اسکیم کی مدد فراہم نہیں کرسکے اور اب وہ کہہ رہے ہیں کہ وہ انسانوں اور جانوروں کے لئے صحت کی بہتر سہولیات مہیا کریں گے۔ ان کا کھلا خط بہار کے محنتی لوگوں کا مذاق اڑا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بہار کے عوام اب نتیش کمار کی جملے بازی کو سمجھ گئے ہیں۔ ریاست کے عوام اب جدوجہد کرنے والے آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ ، ترقی پسند جمہوری اتحاد پی ڈی اے اور اس کے تمام حلقوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔ اس بار مینڈیٹ نتیش کمار کی حکمرانی کو ختم کردے گا۔

    آصف نے کہا کہ نتیش کے دور حکومت میں امن اور بھائی چارے کا ماحول خراب ہوا ہے اور خوف کا ماحول عروج پر ہے۔ این ڈی اے حکمرانی کے تحت ملک اور ریاست میں ترقی جمود کا شکار ہوگئی ہے۔ تعلیم صحت کی سطح خراب ہوئی ہے۔ نتیش کے گھروں میں پانی تک رسائی نہ ہونے کے تمام دعوے کھوکھلے ہیں۔ آصف نے کہا ہے کہ وزیر اعلی کو یہ بتانا چاہئے کہ جب ممبئی جیسے شہر میں بہاریوں کی توہین کی جاتی ہے تو وہ خاموش کیوں رہتے ہیں۔ ایسا نظام کیوں نہیں بنایا گیا کہ ریاست کے لوگوں کو دوسرے شہر نہیں جانا پڑے۔