نتیش کے خط سے حکومت بے نقاب ، مستعفی ہوں نتیش: آصف

نتیش نے بہار کی ترقی اور عزت کے تحفظ کے لئے کچھ نہیں کیا: آصف
کچھ نہیں کیا سب کچھ پھر سے کرنا ہے تو استعفیٰ دیں نتیش : آصف

sm-asif-pic1نئی دہلی08اکتوبر2020۔
آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ نے کہا کہ وزیر اعلی نتیش کمار کا عوام کو کھلا خط ان کا اعتراف ہے کہ وہ اپنے پندرہ سال کے اقتدار کے دوران بہار کی ترقی اور اس کے اعزاز کے تحفظ کے لئے کچھ نہیں کر سکے ہیں۔ لہذا ، وہ اخلاقی بنیادوں پر اپنے عہدے سے استعفی دے کر اس انتخاب سے دستبردار ہوجائےں۔
آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ کے صدر ایس ایم آصف نے ملک کے دارالحکومت سے جاری ایک بیان میں کہا کہ جب ملک کے مختلف شہروں میں لاک ڈاو ¿ن کے دوران ریاست کے کارکنوں کو جلدی کا سامنا کرنا پڑا تو ریاست کی محنت کشوں کو اپنی جانوں کی حفاظت کے لئے اپنے آبائی گاو ¿ں – قصبے میں جانا پڑا۔ واپسی کے دوران ، نتیش کمار نے کہا کہ ہم انہیں بہار میں داخل نہیں ہونے دیں گے اور پھر بھی جب وہ آئے تو انہوں نے ان کے لئے معاش کا کوئی بندوبست نہیں کیا۔ حیرت کی بات ہے کہ اس انتخابات کے دوران بھی بہار سے ملک کے مختلف شہروں میں مزدوروں کی نقل مکانی کا سلسلہ بدستور جاری ہے۔ اس کے لئے نتیش ذمہ دار ہیں۔بظاہر انہوں نے ایسا کچھ نہیں کیا جس سے مزدور خود کو اپنی ریاست میں محفوظ سمجھ سکیں۔

آصف نے کہا ہے کہ وزیر اعلی نتیش کمار بہاریوں کے اعزاز کے تحفظ میں مکمل طور پر ناکام ہوچکے ہیں۔ چنانچہ اب انتخابات کے موقع پر وہ یہ کہہ رہے ہیں کہ نوجوانوں کو طاقت ، قابل اور خود سہارا دینے والی خواتین بنانے ، ہر فارم کو پانی مہیا کرنے ، صاف اور خوشحال دیہات اور شہر بنانے کے لئے کام کیا جائے گا۔
آصف نے الزام لگایا کہ وہ بہار کے بھوکے عوام کو وزیر اعظم ریلیف اسکیم کی مدد فراہم نہیں کرسکے اور اب وہ کہہ رہے ہیں کہ وہ انسانوں اور جانوروں کے لئے صحت کی بہتر سہولیات مہیا کریں گے۔ ان کا کھلا خط بہار کے محنتی لوگوں کا مذاق اڑا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بہار کے عوام اب نتیش کمار کی جملے بازی کو سمجھ گئے ہیں۔ ریاست کے عوام اب جدوجہد کرنے والے آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ ، ترقی پسند جمہوری اتحاد پی ڈی اے اور اس کے تمام حلقوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔ اس بار مینڈیٹ نتیش کمار کی حکمرانی کو ختم کردے گا۔

آصف نے کہا کہ نتیش کے دور حکومت میں امن اور بھائی چارے کا ماحول خراب ہوا ہے اور خوف کا ماحول عروج پر ہے۔ این ڈی اے حکمرانی کے تحت ملک اور ریاست میں ترقی جمود کا شکار ہوگئی ہے۔ تعلیم صحت کی سطح خراب ہوئی ہے۔ نتیش کے گھروں میں پانی تک رسائی نہ ہونے کے تمام دعوے کھوکھلے ہیں۔ آصف نے کہا ہے کہ وزیر اعلی کو یہ بتانا چاہئے کہ جب ممبئی جیسے شہر میں بہاریوں کی توہین کی جاتی ہے تو وہ خاموش کیوں رہتے ہیں۔ ایسا نظام کیوں نہیں بنایا گیا کہ ریاست کے لوگوں کو دوسرے شہر نہیں جانا پڑے۔

Comment is closed.